Project Description

AL MULK

 شروع الله کا نام لے کر جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے

۱  وہ (خدا) جس کے ہاتھ میں بادشاہی ہے بڑی برکت والا ہے۔ اور وہ ہر چیز پر قادر ہے
۲  اسی نے موت اور زندگی کو پیدا کیا تاکہ تمہاری آزمائش کرے کہ تم میں کون اچھے عمل کرتا ہے۔ اور وہ زبردست (اور) بخشنے والا ہے
۳  اس نے سات آسمان اوپر تلے بنائے۔ (اے دیکھنے والے) کیا تو (خدا) رحمٰن کی آفرینش میں کچھ نقص دیکھتا ہے؟ ذرا آنکھ اٹھا کر دیکھ بھلا تجھ کو (آسمان میں) کوئی شگاف نظر آتا ہے؟
۴  پھر دو بارہ (سہ بارہ) نظر کر، تو نظر (ہر بار) تیرے پاس ناکام اور تھک کر لوٹ آئے گی
۵  اور ہم نے قریب کے آسمان کو (تاروں کے) چراغوں سے زینت دی۔ اور ان کو شیطان کے مارنے کا آلہ بنایا اور ان کے لئے دہکتی آگ کا عذاب تیار کر رکھا ہے
۶  اور جن لوگوں نے اپنے پروردگار سے انکار کیا ان کے لئے جہنم کا عذاب ہے۔ اور وہ برا ٹھکانہ ہے
۷  جب وہ اس میں ڈالے جائیں گے تو اس کا چیخنا چلانا سنیں گے اور وہ جوش مار رہی ہوگی
۸  گویا مارے جوش کے پھٹ پڑے گی۔ جب اس میں ان کی کوئی جماعت ڈالی جائے گی تو دوزخ کے داروغہ ان سے پوچھیں گے کہ تمہارے پاس کوئی ہدایت کرنے والا نہیں آیا تھا؟
۹  وہ کہیں گے کیوں نہیں ضرور ہدایت کرنے والا آیا تھا لیکن ہم نے اس کو جھٹلا دیا اور کہا کہ خدا نے تو کوئی چیز نازل ہی نہیں کی۔ تم تو بڑی غلطی میں (پڑے ہوئے) ہو
۱۰  اور کہیں گے اگر ہم سنتے یا سمجھتے ہوتے تو دوزخیوں میں نہ ہوتے
۱۱  پس وہ اپنے گناہ کا اقرار کرلیں گے۔ سو دوزخیوں کے لئے (رحمت خدا سے) دور ہی ہے
۱۲  (اور) جو لوگ بن دیکھے اپنے پروردگار سے ڈرتے ہیں ان کے لئے بخشش اور اجر عظیم ہے
۱۳  اور تم (لوگ) بات پوشیدہ کہو یا ظاہر۔ وہ دل کے بھیدوں تک سے واقف ہے
۱۴  بھلا جس نے پیدا کیا وہ بےخبر ہے؟ وہ تو پوشیدہ باتوں کا جاننے والا اور (ہر چیز سے) آگاہ ہے
۱۵  وہی تو ہے جس نے تمہارے لئے زمین کو نرم کیا تو اس کی راہوں میں چلو پھرو اور خدا کا (دیا ہو) رزق کھاؤ اور تم کو اسی کے پاس (قبروں سے) نکل کر جانا ہے
۱۶  کیا تم اس سے جو آسمان میں ہے بےخوف ہو کہ تم کو زمین میں دھنسا دے اور وہ اس وقت حرکت کرنے لگے
۱۷  کیا تم اس سے جو آسمان میں ہے نڈر ہو کہ تم پر کنکر بھری ہوا چھوڑ دے۔ سو تم عنقریب جان لو گے کہ میرا ڈرانا کیسا ہے
۱۸  اور جو لوگ ان سے پہلے تھے انہوں نے بھی جھٹلایا تھا سو (دیکھ لو کہ) میرا کیسا عذاب ہوا
۱۹  کیا انہوں نے اپنے سروں پر اڑتے ہوئے جانوروں کو نہیں دیکھا جو پروں کو پھیلائے رہتے ہیں اور ان کو سکیڑ بھی لیتے ہیں۔ خدا کے سوا انہیں کوئی تھام نہیں سکتا۔ بےشک وہ ہر چیز کو دیکھ رہا ہے
۲۰  بھلا ایسا کون ہے جو تمہاری فوج ہو کر خدا کے سوا تمہاری مدد کرسکے۔ کافر تو دھوکے میں ہیں
۲۱  بھلا اگر وہ اپنا رزق بند کرلے تو کون ہے جو تم کو رزق دے؟ لیکن یہ سرکشی اور نفرت میں پھنسے ہوئے ہیں
۲۲  بھلا جو شخص چلتا ہوا منہ کے بل گر پڑتا ہے وہ سیدھے رستے پر ہے یا وہ جو سیدھے رستے پر برابر چل رہا ہو؟
۲۳  کہو وہ خدا ہی تو ہے جس نے تم کو پیدا کیا۔ اور تمہارے کان اور آنکھیں اور دل بنائے (مگر) تم کم احسان مانتے ہو
۲۴  کہہ دو کہ وہی ہے جس نے تم کو زمین میں پھیلایا اور اسی کے روبرو تم جمع کئے جاؤ گے
۲۵  اور کافر کہتے ہیں کہ اگر تم سچے ہو تو یہ وعید کب (پورا) ہوگا؟
۲۶  کہہ دو اس کا علم خدا ہی کو ہے۔ اور میں تو کھول کھول کر ڈر سنانے دینے والا ہوں
۲۷  سو جب وہ دیکھ لیں گے کہ وہ (وعدہ) قریب آگیا تو کافروں کے منہ برے ہوجائیں گے اور (ان سے) کہا جائے گا کہ یہ وہی ہے جس کے تم خواستگار تھے
۲۸  کہو کہ بھلا دیکھو تو اگر خدا مجھ کو اور میرے ساتھیوں کو ہلاک کردے یا ہم پر مہربانی کرے۔ تو کون ہے کافروں کو دکھ دینے والے عذاب سے پناہ دے؟
۲۹  کہہ دو کہ وہ جو (خدائے) رحمٰن (ہے) ہم اسی پر ایمان لائے اور اسی پر بھروسا رکھتے ہیں۔ تم کو جلد معلوم ہوجائے گا کہ صریح گمراہی میں کون پڑ رہا تھا
۳۰  کہو کہ بھلا دیکھو تو اگر تمہارا پانی (جو تم پیتے ہو اور برتے ہو) خشک ہوجائے تو (خدا کے) سوا کون ہے جو تمہارے لئے شیریں پانی کا چشمہ بہا لائے

 بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَٰنِ الرَّحِيمِ

١  تَبَارَكَ الَّذِي بِيَدِهِ الْمُلْكُ وَهُوَ عَلَىٰ كُلِّ شَيْءٍ قَدِيرٌ
٢  الَّذِي خَلَقَ الْمَوْتَ وَالْحَيَاةَ لِيَبْلُوَكُمْ أَيُّكُمْ أَحْسَنُ عَمَلًا ۚ وَهُوَ الْعَزِيزُ الْغَفُورُ
٣  الَّذِي خَلَقَ سَبْعَ سَمَاوَاتٍ طِبَاقًا ۖ مَا تَرَىٰ فِي خَلْقِ الرَّحْمَٰنِ مِنْ تَفَاوُتٍ ۖ فَارْجِعِ الْبَصَرَ هَلْ تَرَىٰ مِنْ فُطُورٍ
٤  ثُمَّ ارْجِعِ الْبَصَرَ كَرَّتَيْنِ يَنْقَلِبْ إِلَيْكَ الْبَصَرُ خَاسِئًا وَهُوَ حَسِيرٌ
٥  وَلَقَدْ زَيَّنَّا السَّمَاءَ الدُّنْيَا بِمَصَابِيحَ وَجَعَلْنَاهَا رُجُومًا لِلشَّيَاطِينِ ۖ وَأَعْتَدْنَا لَهُمْ عَذَابَ السَّعِيرِ
٦  وَلِلَّذِينَ كَفَرُوا بِرَبِّهِمْ عَذَابُ جَهَنَّمَ ۖ وَبِئْسَ الْمَصِيرُ
٧  إِذَا أُلْقُوا فِيهَا سَمِعُوا لَهَا شَهِيقًا وَهِيَ تَفُورُ
٨  تَكَادُ تَمَيَّزُ مِنَ الْغَيْظِ ۖ كُلَّمَا أُلْقِيَ فِيهَا فَوْجٌ سَأَلَهُمْ خَزَنَتُهَا أَلَمْ يَأْتِكُمْ نَذِيرٌ
٩  قَالُوا بَلَىٰ قَدْ جَاءَنَا نَذِيرٌ فَكَذَّبْنَا وَقُلْنَا مَا نَزَّلَ اللَّهُ مِنْ شَيْءٍ إِنْ أَنْتُمْ إِلَّا فِي ضَلَالٍ كَبِيرٍ
١٠  وَقَالُوا لَوْ كُنَّا نَسْمَعُ أَوْ نَعْقِلُ مَا كُنَّا فِي أَصْحَابِ السَّعِيرِ
١١  فَاعْتَرَفُوا بِذَنْبِهِمْ فَسُحْقًا لِأَصْحَابِ السَّعِيرِ
١٢  إِنَّ الَّذِينَ يَخْشَوْنَ رَبَّهُمْ بِالْغَيْبِ لَهُمْ مَغْفِرَةٌ وَأَجْرٌ كَبِيرٌ
١٣  وَأَسِرُّوا قَوْلَكُمْ أَوِ اجْهَرُوا بِهِ ۖ إِنَّهُ عَلِيمٌ بِذَاتِ الصُّدُورِ
١٤  أَلَا يَعْلَمُ مَنْ خَلَقَ وَهُوَ اللَّطِيفُ الْخَبِيرُ
١٥  هُوَ الَّذِي جَعَلَ لَكُمُ الْأَرْضَ ذَلُولًا فَامْشُوا فِي مَنَاكِبِهَا وَكُلُوا مِنْ رِزْقِهِ ۖ وَإِلَيْهِ النُّشُورُ
١٦  أَأَمِنْتُمْ مَنْ فِي السَّمَاءِ أَنْ يَخْسِفَ بِكُمُ الْأَرْضَ فَإِذَا هِيَ تَمُورُ
١٧  أَمْ أَمِنْتُمْ مَنْ فِي السَّمَاءِ أَنْ يُرْسِلَ عَلَيْكُمْ حَاصِبًا ۖ فَسَتَعْلَمُونَ كَيْفَ نَذِيرِ
١٨  وَلَقَدْ كَذَّبَ الَّذِينَ مِنْ قَبْلِهِمْ فَكَيْفَ كَانَ نَكِيرِ
١٩  أَوَلَمْ يَرَوْا إِلَى الطَّيْرِ فَوْقَهُمْ صَافَّاتٍ وَيَقْبِضْنَ ۚ مَا يُمْسِكُهُنَّ إِلَّا الرَّحْمَٰنُ ۚ إِنَّهُ بِكُلِّ شَيْءٍ بَصِيرٌ
٢٠  أَمَّنْ هَٰذَا الَّذِي هُوَ جُنْدٌ لَكُمْ يَنْصُرُكُمْ مِنْ دُونِ الرَّحْمَٰنِ ۚ إِنِ الْكَافِرُونَ إِلَّا فِي غُرُورٍ
٢١  أَمَّنْ هَٰذَا الَّذِي يَرْزُقُكُمْ إِنْ أَمْسَكَ رِزْقَهُ ۚ بَلْ لَجُّوا فِي عُتُوٍّ وَنُفُورٍ
٢٢  أَفَمَنْ يَمْشِي مُكِبًّا عَلَىٰ وَجْهِهِ أَهْدَىٰ أَمَّنْ يَمْشِي سَوِيًّا عَلَىٰ صِرَاطٍ مُسْتَقِيمٍ
٢٣  قُلْ هُوَ الَّذِي أَنْشَأَكُمْ وَجَعَلَ لَكُمُ السَّمْعَ وَالْأَبْصَارَ وَالْأَفْئِدَةَ ۖ قَلِيلًا مَا تَشْكُرُونَ
٢٤  قُلْ هُوَ الَّذِي ذَرَأَكُمْ فِي الْأَرْضِ وَإِلَيْهِ تُحْشَرُونَ
٢٥  وَيَقُولُونَ مَتَىٰ هَٰذَا الْوَعْدُ إِنْ كُنْتُمْ صَادِقِينَ
٢٦  قُلْ إِنَّمَا الْعِلْمُ عِنْدَ اللَّهِ وَإِنَّمَا أَنَا نَذِيرٌ مُبِينٌ
٢٧  فَلَمَّا رَأَوْهُ زُلْفَةً سِيئَتْ وُجُوهُ الَّذِينَ كَفَرُوا وَقِيلَ هَٰذَا الَّذِي كُنْتُمْ بِهِ تَدَّعُونَ
٢٨  قُلْ أَرَأَيْتُمْ إِنْ أَهْلَكَنِيَ اللَّهُ وَمَنْ مَعِيَ أَوْ رَحِمَنَا فَمَنْ يُجِيرُ الْكَافِرِينَ مِنْ عَذَابٍ أَلِيمٍ
٢٩  قُلْ هُوَ الرَّحْمَٰنُ آمَنَّا بِهِ وَعَلَيْهِ تَوَكَّلْنَا ۖ فَسَتَعْلَمُونَ مَنْ هُوَ فِي ضَلَالٍ مُبِينٍ
٣٠  قُلْ أَرَأَيْتُمْ إِنْ أَصْبَحَ مَاؤُكُمْ غَوْرًا فَمَنْ يَأْتِيكُمْ بِمَاءٍ مَعِينٍ

 In the name of Allah, the Entirely Merciful, the Especially Merciful.

1  Blessed is He in whose hand is dominion, and He is over all things competent –
2  [He] who created death and life to test you [as to] which of you is best in deed – and He is the Exalted in Might, the Forgiving –
3  [And] who created seven heavens in layers. You do not see in the creation of the Most Merciful any inconsistency. So return [your] vision [to the sky]; do you see any breaks?
4  Then return [your] vision twice again. [Your] vision will return to you humbled while it is fatigued.
5  And We have certainly beautified the nearest heaven with stars and have made [from] them what is thrown at the devils and have prepared for them the punishment of the Blaze.
6  And for those who disbelieved in their Lord is the punishment of Hell, and wretched is the destination.
7  When they are thrown into it, they hear from it a [dreadful] inhaling while it boils up.
8  It almost bursts with rage. Every time a company is thrown into it, its keepers ask them, “Did there not come to you a warner?”
9  They will say,” Yes, a warner had come to us, but we denied and said, ‘Allah has not sent down anything. You are not but in great error.'”
10  And they will say, “If only we had been listening or reasoning, we would not be among the companions of the Blaze.”
11  And they will admit their sin, so [it is] alienation for the companions of the Blaze.
12  Indeed, those who fear their Lord unseen will have forgiveness and great reward.
13  And conceal your speech or publicize it; indeed, He is Knowing of that within the breasts.
14  Does He who created not know, while He is the Subtle, the Acquainted?
15  It is He who made the earth tame for you – so walk among its slopes and eat of His provision – and to Him is the resurrection.
16  Do you feel secure that He who [holds authority] in the heaven would not cause the earth to swallow you and suddenly it would sway?
17  Or do you feel secure that He who [holds authority] in the heaven would not send against you a storm of stones? Then you would know how [severe] was My warning.
18  And already had those before them denied, and how [terrible] was My reproach.
19  Do they not see the birds above them with wings outspread and [sometimes] folded in? None holds them [aloft] except the Most Merciful. Indeed He is, of all things, Seeing.
20  Or who is it that could be an army for you to aid you other than the Most Merciful? The disbelievers are not but in delusion.
21  Or who is it that could provide for you if He withheld His provision? But they have persisted in insolence and aversion.
22  Then is one who walks fallen on his face better guided or one who walks erect on a straight path?
23  Say, “It is He who has produced you and made for you hearing and vision and hearts; little are you grateful.”
24  Say, “It is He who has multiplied you throughout the earth, and to Him you will be gathered.”
25  And they say, “When is this promise, if you should be truthful?”
26  Say, “The knowledge is only with Allah, and I am only a clear warner.”
27  But when they see it approaching, the faces of those who disbelieve will be distressed, and it will be said, “This is that for which you used to call.”
28  Say, [O Muhammad], “Have you considered: whether Allah should cause my death and those with me or have mercy upon us, who can protect the disbelievers from a painful punishment?”
29  Say, “He is the Most Merciful; we have believed in Him, and upon Him we have relied. And you will [come to] know who it is that is in clear error.”
30  Say, “Have you considered: if your water was to become sunken [into the earth], then who could bring you flowing water?”

 奉至仁至慈的真主之名

1  多福哉拥有主权者!他对於万事是全能的。
2  他曾创造了死生,以便他考验你们谁的作为是最优美的。他是万能的,是至赦的。
3  他创造了七层天,你在至仁主的所造物中,不能看出一点参差。你再看看!你究竟能看出甚么缺陷呢?
4  然后你再看两次,你的眼睛将昏花地、疲倦地转回来!
5  我确已以众星点缀最近的天,并以众星供恶魔们猜测。我已为他们预备火狱的刑罚。
6  不信主的人们将受火狱的刑罚,那归宿真恶劣!
7  当他们被投入火狱的时候,他们将听见沸腾的火狱发出驴鸣般的声音。
8  火狱几乎为愤怒而破碎,每有一群人被投入其中,管火狱的天神们就对他们说: 难道没有任何警告者降临你们吗?
9  他们说:不然!警告者确已降临我们了,但我们否认他们,我们说:真主没有降示甚么,你们只在重大的迷误中。’
10  他们说:假若我们能听从,或能明理,我们必不致沦於火狱的居民之列!
11  他们承认他们的罪过。让火狱的居民远离真主的慈恩!
12  在秘密中畏惧主的人们,将蒙赦宥和重大的报酬。
13  你们可以隐匿你们的言语;也可以把它说出来。他确是全 知心事的。
14  创造者既是玄妙而且彻知的,难道他不知道你们所隐匿的言语吗?
15  他为你们而使大地平稳,你们应当在大地的各方行走,应当吃他的给养,你们复活后,只归於他。
16  难道你们不怕在天上的主使大地在震荡的时候吞咽你们吗?
17  难道你们不怕在天上的主使飞沙走石的暴风摧毁你们吗?你们将知道我的警告是怎样的。
18  在他们之前逝去的人们,确已否认众使者,我的谴责是怎样的?
19  难道他们没有看见在他们的上面展翅和 翼的众鸟吗?只有至仁主维持它们,他确是明察万物的。
20  除了真主援助你们外,还有谁能做你们的援军呢?你们只陷於自欺之中。
21  谁能供给你们呢?如果至仁主扣留他的给养。不然,他们固执著骄傲和勃逆。
22  究竟谁更能获得引导呢?是匍匐而行的人呢?还是在正路上挺身而行的人呢?
23  你说:他是创造你们,并为你们创造耳、目和心的。你们却很少感谢。
24  你说:他是使你们繁殖於大地上的,你们将来要被集合到他那里。
25  他们说:这个警告甚么时候实现呢?如果你们是诚实的人。
26  你说:关於此事的知识,只在主那里,我只是一个坦率的警告者。
27  当他们看见这应许临近的时候,不信的人们的面目将变成黑的!或者将说:这就是你们生前妄言不会实现的事。
28  你说:你们告诉我吧,如果真主毁灭我,和我的同道,或怜悯我们,那末,谁使不信道的人们得免於痛苦的刑罚呢?
29  你说:他是至仁主,我们已信仰他,我们只信赖他。你们将知道谁在明显的迷误中。
30  你说:你们告诉我吧,如果你们的水一旦渗漏了,谁能给你们一条流水呢?

 ¡En el nombre de Alá, el Compasivo, el Misericordioso!

1  ¡Bendito sea Aquél en Cuya mano está el dominio! Es omnipotente.
2  Es Quien ha creado la muerte y la vida para probaros, para ver quién de vosotros es el que mejor se porta. Es el Poderoso, el Indulgente.
3  Es Quien ha creado siete cielos superpuestos. No ves ninguna contradición en la creación del Compasivo. ¡Mira otra vez! ¿Adviertes alguna falla?
4  Luego, mira otras dos veces: tu mirada volverá a ti cansada, agotada.
5  Hemos engalanado el cielo más bajo con luminares, de los que hemos hecho proyectiles contra los demonios y hemos preparado para ellos el castigo del fuego de la gehena.
6  Quienes no hayan creído en su Señor tendrán el castigo de la gehena. ¡Qué mal fin…!
7  Cuando sean arrojados a ella, oirán su fragor, en plena ebullición,
8  a punto de estallar de furor. Siempre que se le arroje una oleada, sus guardianes les preguntarán: «¿Es que no vino a vosotros un monitor?»
9  «¡Claro que sí!» dirán: «Vino a nosotros un monitor, pero desmentimos, y dijimos: ‘Alá no ha revelado nada. No estáis sino muy extraviados’».
10  Y dirán: «Si hubiéramos oído o comprendido, no moraríamos ahora en el fuego de la gehena».
11  Confesarán su pecado. ¡Que Alá aleje a los moradores del fuego de la gehena!
12  Quienes hayan tenido miedo a su Señor en secreto tendrán perdón y una gran recompensa.
13  Da lo mismo que mantengáis ocultas vuestras palabras o que las divulguéis. Él conoce bien lo que encierran los pechos.
14  ¿No va a saber Quien ha creado, Él, Que es el Sutil, el Bien Informado?
15  Él es Quien os ha hecho dócil la tierra. Recorredla, pues, de acá para allá y comed de Su sustento. La Resurrección se hará hacia Él.
16  ¿Estáis a salvo de que Quien está en el cielo haga que la tierra os trague? He aquí que tiembla…
17  ¿O estáis a salvo de que Quien está en el cielo envíe contra vosotros una tempestad de arena? Entonces veréis cómo era Mi advertencia…
18  Quienes fueron antes que ellos desmintieron y ¡cuál no fue Mi reprobación!
19  ¿Es que no han visto las aves encima de ellos, desplegando y recogiendo las alas? Sólo el Compasivo las sostiene. Lo ve bien todo.
20  O ¿quién es el que podría auxiliaros cual legión, fuera del Compasivo? Los infieles son presa de una ilusión.
21  O ¿quien es el que os proveería de sustento si Él interrumpiera Su sustento? Sí, persisten en su insolencia y aversión.
22  Quien anda agachado ¿va mejor dirigido que quien anda erguido por una vía recta?
23  Di: «Él es Quien os ha creado, Quien os ha dado el oído, la vista y el intelecto. ¡Qué poco agradecidos sois!»
24  Di: «Él es Quien os ha diseminado por la tierra. Y hacia Él seréis congregados».
25  Y dicen: «¿Cuándo se cumplirá esta amenaza, si es verdad lo que decís?»
26  Di: «Sólo Alá lo sabe. Yo soy solamente un monitor que habla claro».
27  Pero, en cuanto vean su inminencia, se afligirán los rostros de los infieles. Y se dirá: «Aquí tenéis lo que reclamabais».
28  Di: «¿Qué os parece? Lo mismo si Alá nos hace perecer, a mí y a los que están conmigo, que si se apiada de nosotros, ¿quién preservará a los infieles de un castigo doloroso?
29  Di: «¡Es el Compasivo! ¡Creemos en Él y confiamos en Él! Ya veréis quién es el que está evidentemente extraviado».
30  Di: «¿Qué os parece? Si el agua se os agotara una mañana, ¿quien iba a traeros agua viva?»