Project Description

AL JINN

 شروع الله کا نام لے کر جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے

۱  (اے پیغمبر لوگوں سے) کہہ دو کہ میرے پاس وحی آئی ہے کہ جنوں کی ایک جماعت نے (اس کتاب کو) سنا تو کہنے لگے کہ ہم نے ایک عجیب قرآن سنا
۲  جو بھلائی کا رستہ بتاتا ہے سو ہم اس پر ایمان لے آئے۔ اور ہم اپنے پروردگار کے ساتھ کسی کو شریک نہیں بنائیں گے
۳  اور یہ کہ ہمارے پروردگار کی عظمت (شان) بہت بڑی ہے اور وہ نہ بیوی رکھتا ہے نہ اولاد
۴  اور یہ کہ ہم میں سے بعض بےوقوف خدا کے بارے میں جھوٹ افتراء کرتا ہے
۵  اور ہمارا (یہ) خیال تھا کہ انسان اور جن خدا کی نسبت جھوٹ نہیں بولتے
۶  اور یہ کہ بعض بنی آدم بعض جنات کی پناہ پکڑا کرتے تھے (اس سے) ان کی سرکشی اور بڑھ گئی تھی
۷  اور یہ کہ ان کا بھی یہی اعتقاد تھا جس طرح تمہارا تھا کہ خدا کسی کو نہیں جلائے گا
۸  اور یہ کہ ہم نے آسمان کو ٹٹولا تو اس کو مضبوط چوکیداروں اور انگاروں سے سے بھرا پایا
۹  اور یہ کہ پہلے ہم وہاں بہت سے مقامات میں (خبریں) سننے کے لئے بیٹھا کرتے تھے۔ اب کوئی سننا چاہے تو اپنے لئے انگارا تیار پائے
۱۰  اور یہ کہ ہمیں معلوم نہیں کہ اس سے اہل زمین کے حق میں برائی مقصود ہے یا ان کے پروردگار نے ان کی بھلائی کا ارادہ فرمایا ہے
۱۱  اور یہ کہ ہم میں کوئی نیک ہیں اور کوئی اور طرح کے۔ ہمارے کئی طرح کے مذہب ہیں
۱۲  اور یہ کہ ہم نے یقین کرلیا ہے کہ ہم زمین میں (خواہ کہیں ہوں) خدا کو ہرا نہیں سکتے اور نہ بھاگ کر اس کو تھکا سکتے ہیں
۱۳  اور جب ہم نے ہدایت (کی کتاب) سنی اس پر ایمان لے آئے۔ تو جو شخص اپنے پروردگار پر ایمان لاتا ہے اس کو نہ نقصان کا خوف ہے نہ ظلم کا
۱۴  اور یہ کہ ہم میں بعض فرمانبردار ہیں اور بعض (نافرمان) گنہگار ہیں۔ تو جو فرمانبردار ہوئے وہ سیدھے رستے پر چلے
۱۵  اور جو گنہگار ہوئے وہ دوزخ کا ایندھن بنے
۱۶  اور (اے پیغمبر) یہ (بھی ان سے کہہ دو) کہ اگر یہ لوگ سیدھے رستے پر رہتے تو ہم ان کے پینے کو بہت سا پانی دیتے
۱۷  تاکہ اس سے ان کی آزمائش کریں۔ اور جو شخص اپنے پروردگار کی یاد سے منہ پھیرے گا وہ اس کو سخت عذاب میں داخل کرے گا
۱۸  اور یہ کہ مسجدیں (خاص) خدا کی ہیں تو خدا کے ساتھ کسی اور کی عبادت نہ کرو
۱۹  اور جب خدا کے بندے (محمدﷺ) اس کی عبادت کو کھڑے ہوئے تو کافر ان کے گرد ہجوم کرلینے کو تھے
۲۰  کہہ دو کہ میں تو اپنے پروردگار ہی کی عبادت کرتا ہوں اور کسی کو اس کا شریک نہیں بناتا
۲۱  (یہ بھی) کہہ دو کہ میں تمہارے حق میں نقصان اور نفع کا کچھ اختیار نہیں رکھتا
۲۲  (یہ بھی) کہہ دو کہ خدا (کے عذاب) سے مجھے کوئی پناہ نہیں دے سکتا۔ اور میں اس کے سوا کہیں جائے پناہ نہیں دیکھتا
۲۳  ہاں خدا کی طرف سے احکام کا اور اس کے پیغاموں کا پہنچا دینا (ہی) میرے ذمے ہے۔ اور جو شخص خدا اور اس کے پیغمبر کی نافرمانی کرے گا تو ایسوں کے لئے جہنم کی آگ ہے ہمیشہ ہمیشہ اس میں رہیں گے
۲۴  یہاں تک کہ جب یہ لوگ وہ (دن) دیکھ لیں گے جس کا ان سے وعدہ کیا جاتا ہے تب ان کو معلوم ہو جائے گا کہ مددگار کس کے کمزور اور شمار کن کا تھوڑا ہے
۲۵  کہہ دو کہ جس (دن) کا تم سے وعدہ کیا جاتا ہے میں نہیں جانتا کہ وہ (عن) قریب (آنے والا ہے) یا میرے پروردگار نے اس کی مدت دراز کر دی ہے
۲۶  غیب (کی بات) جاننے والا ہے اور کسی پر اپنے غیب کو ظاہر نہیں کرتا
۲۷  ہاں جس پیغمبر کو پسند فرمائے تو اس (کو غیب کی باتیں بتا دیتا اور اس) کے آگے اور پیچھے نگہبان مقرر کر دیتا ہے
۲۸  تاکہ معلوم فرمائے کہ انہوں نے اپنے پروردگار کے پیغام پہنچا دیئے ہیں اور (یوں تو) اس نے ان کی سب چیزوں کو ہر طرف سے قابو کر رکھا ہے اور ایک ایک چیز گن رکھی ہے

بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَٰنِ الرَّحِيمِ

١  قُلْ أُوحِيَ إِلَيَّ أَنَّهُ اسْتَمَعَ نَفَرٌ مِنَ الْجِنِّ فَقَالُوا إِنَّا سَمِعْنَا قُرْآنًا عَجَبًا
٢  يَهْدِي إِلَى الرُّشْدِ فَآمَنَّا بِهِ ۖ وَلَنْ نُشْرِكَ بِرَبِّنَا أَحَدًا
٣  وَأَنَّهُ تَعَالَىٰ جَدُّ رَبِّنَا مَا اتَّخَذَ صَاحِبَةً وَلَا وَلَدًا
٤  وَأَنَّهُ كَانَ يَقُولُ سَفِيهُنَا عَلَى اللَّهِ شَطَطًا
٥  وَأَنَّا ظَنَنَّا أَنْ لَنْ تَقُولَ الْإِنْسُ وَالْجِنُّ عَلَى اللَّهِ كَذِبًا
٦  وَأَنَّهُ كَانَ رِجَالٌ مِنَ الْإِنْسِ يَعُوذُونَ بِرِجَالٍ مِنَ الْجِنِّ فَزَادُوهُمْ رَهَقًا
٧  وَأَنَّهُمْ ظَنُّوا كَمَا ظَنَنْتُمْ أَنْ لَنْ يَبْعَثَ اللَّهُ أَحَدًا
٨  وَأَنَّا لَمَسْنَا السَّمَاءَ فَوَجَدْنَاهَا مُلِئَتْ حَرَسًا شَدِيدًا وَشُهُبًا
٩  وَأَنَّا كُنَّا نَقْعُدُ مِنْهَا مَقَاعِدَ لِلسَّمْعِ ۖ فَمَنْ يَسْتَمِعِ الْآنَ يَجِدْ لَهُ شِهَابًا رَصَدًا
١٠  وَأَنَّا لَا نَدْرِي أَشَرٌّ أُرِيدَ بِمَنْ فِي الْأَرْضِ أَمْ أَرَادَ بِهِمْ رَبُّهُمْ رَشَدًا
١١  وَأَنَّا مِنَّا الصَّالِحُونَ وَمِنَّا دُونَ ذَٰلِكَ ۖ كُنَّا طَرَائِقَ قِدَدًا
١٢  وَأَنَّا ظَنَنَّا أَنْ لَنْ نُعْجِزَ اللَّهَ فِي الْأَرْضِ وَلَنْ نُعْجِزَهُ هَرَبًا
١٣  وَأَنَّا لَمَّا سَمِعْنَا الْهُدَىٰ آمَنَّا بِهِ ۖ فَمَنْ يُؤْمِنْ بِرَبِّهِ فَلَا يَخَافُ بَخْسًا وَلَا رَهَقًا
١٤  وَأَنَّا مِنَّا الْمُسْلِمُونَ وَمِنَّا الْقَاسِطُونَ ۖ فَمَنْ أَسْلَمَ فَأُولَٰئِكَ تَحَرَّوْا رَشَدًا
١٥  وَأَمَّا الْقَاسِطُونَ فَكَانُوا لِجَهَنَّمَ حَطَبًا
١٦  وَأَنْ لَوِ اسْتَقَامُوا عَلَى الطَّرِيقَةِ لَأَسْقَيْنَاهُمْ مَاءً غَدَقًا
١٧  لِنَفْتِنَهُمْ فِيهِ ۚ وَمَنْ يُعْرِضْ عَنْ ذِكْرِ رَبِّهِ يَسْلُكْهُ عَذَابًا صَعَدًا
١٨  وَأَنَّ الْمَسَاجِدَ لِلَّهِ فَلَا تَدْعُوا مَعَ اللَّهِ أَحَدًا
١٩  وَأَنَّهُ لَمَّا قَامَ عَبْدُ اللَّهِ يَدْعُوهُ كَادُوا يَكُونُونَ عَلَيْهِ لِبَدًا
٢٠  قُلْ إِنَّمَا أَدْعُو رَبِّي وَلَا أُشْرِكُ بِهِ أَحَدًا
٢١  قُلْ إِنِّي لَا أَمْلِكُ لَكُمْ ضَرًّا وَلَا رَشَدًا
٢٢  قُلْ إِنِّي لَنْ يُجِيرَنِي مِنَ اللَّهِ أَحَدٌ وَلَنْ أَجِدَ مِنْ دُونِهِ مُلْتَحَدًا
٢٣  إِلَّا بَلَاغًا مِنَ اللَّهِ وَرِسَالَاتِهِ ۚ وَمَنْ يَعْصِ اللَّهَ وَرَسُولَهُ فَإِنَّ لَهُ نَارَ جَهَنَّمَ خَالِدِينَ فِيهَا أَبَدًا
٢٤  حَتَّىٰ إِذَا رَأَوْا مَا يُوعَدُونَ فَسَيَعْلَمُونَ مَنْ أَضْعَفُ نَاصِرًا وَأَقَلُّ عَدَدًا
٢٥  قُلْ إِنْ أَدْرِي أَقَرِيبٌ مَا تُوعَدُونَ أَمْ يَجْعَلُ لَهُ رَبِّي أَمَدًا
٢٦  عَالِمُ الْغَيْبِ فَلَا يُظْهِرُ عَلَىٰ غَيْبِهِ أَحَدًا
٢٧  إِلَّا مَنِ ارْتَضَىٰ مِنْ رَسُولٍ فَإِنَّهُ يَسْلُكُ مِنْ بَيْنِ يَدَيْهِ وَمِنْ خَلْفِهِ رَصَدًا
٢٨  لِيَعْلَمَ أَنْ قَدْ أَبْلَغُوا رِسَالَاتِ رَبِّهِمْ وَأَحَاطَ بِمَا لَدَيْهِمْ وَأَحْصَىٰ كُلَّ شَيْءٍ عَدَدًا

 In the name of Allah, the Entirely Merciful, the Especially Merciful.

1  Say, [O Muhammad], “It has been revealed to me that a group of the jinn listened and said, ‘Indeed, we have heard an amazing Qur’an.
2  It guides to the right course, and we have believed in it. And we will never associate with our Lord anyone.
3  And [it teaches] that exalted is the nobleness of our Lord; He has not taken a wife or a son
4  And that our foolish one has been saying about Allah an excessive transgression.
5  And we had thought that mankind and the jinn would never speak about Allah a lie.
6  And there were men from mankind who sought refuge in men from the jinn, so they [only] increased them in burden.
7  And they had thought, as you thought, that Allah would never send anyone [as a messenger].
8  And we have sought [to reach] the heaven but found it filled with powerful guards and burning flames.
9  And we used to sit therein in positions for hearing, but whoever listens now will find a burning flame lying in wait for him.
10  And we do not know [therefore] whether evil is intended for those on earth or whether their Lord intends for them a right course.
11  And among us are the righteous, and among us are [others] not so; we were [of] divided ways.
12  And we have become certain that we will never cause failure to Allah upon earth, nor can we escape Him by flight.
13  And when we heard the guidance, we believed in it. And whoever believes in his Lord will not fear deprivation or burden.
14  And among us are Muslims [in submission to Allah], and among us are the unjust. And whoever has become Muslim – those have sought out the right course.
15  But as for the unjust, they will be, for Hell, firewood.’
16  And [Allah revealed] that if they had remained straight on the way, We would have given them abundant provision
17  So We might test them therein. And whoever turns away from the remembrance of his Lord He will put into arduous punishment.
18  And [He revealed] that the masjids are for Allah, so do not invoke with Allah anyone.
19  And that when the Servant of Allah stood up supplicating Him, they almost became about him a compacted mass.”
20  Say, [O Muhammad], “I only invoke my Lord and do not associate with Him anyone.”
21  Say, “Indeed, I do not possess for you [the power of] harm or right direction.”
22  Say, “Indeed, there will never protect me from Allah anyone [if I should disobey], nor will I find in other than Him a refuge.
23  But [I have for you] only notification from Allah, and His messages.” And whoever disobeys Allah and His Messenger – then indeed, for him is the fire of Hell; they will abide therein forever.
24  [The disbelievers continue] until, when they see that which they are promised, then they will know who is weaker in helpers and less in number.
25  Say, “I do not know if what you are promised is near or if my Lord will grant for it a [long] period.”
26  [He is] Knower of the unseen, and He does not disclose His [knowledge of the] unseen to anyone
27  Except whom He has approved of messengers, and indeed, He sends before each messenger and behind him observers
28  That he may know that they have conveyed the messages of their Lord; and He has encompassed whatever is with them and has enumerated all things in number.

 奉至仁至慈的真主之名

1  你说:我曾奉到启示:有几个精灵已经静听,并且说:我们确已听见奇异的《古兰经》,
2  它能导人於正道,故我们信仰它,我们绝不以任何物配我们的主。’
3  赞颂我们的主的尊严!超绝万物,他没有择取妻室,也没有择取儿女。
4  我们中的庸愚,常以悖谬的事诬蔑真主,
5  我们曾猜想人和精灵绝不诬蔑真主。
6  曾有一些男人,求些男精灵保护他们,因而使他们更加骄傲。
7  那些男人曾像你们一样猜想真主绝不使任何死者复活。
8  我们曾试探天,发现天上布满坚强的卫士和灿烂的星宿。
9  过去,我们为窃听而常常坐在天上可坐的地方。现在谁去窃听,谁就发现一颗灿烂的星宿在等著他。
10  我们不知道,究竟是大地上的万物将遭患难呢?还是他们的主欲引他们於正道呢?
11  我们中有善良的,有次於善良的,我们是分为许多派别的。
12  我们相信,我们在大地上,绝不能使真主无奈,也绝不能逃避真主的谴责。
13  当我们听见正道的时候,我们已信仰它。谁信仰主,谁不怕克扣,也不怕受辱。
14  我们中有顺服的,有乖张的。凡顺服的,都是有志於正道的。
15  至於乖张的,将作火狱的燃料。
16  假如他们遵循正道,我必赏赐他们的丰富的雨水,
17  以便我以雨水考验他们。谁退避主的教训,他将使谁入在严峻的刑罚中。
18  一切清真寺,都是真主的,故你们应当祈祷真主,不要祈祷任何物。
19  当真主的仆人起来祈祷的时候,他们几乎群起而攻之。
20  你说:我只祈祷我的主,我不以任何物配他。
21  你说:我不能为你们主持祸福。
22  你说:任何人不能保护我不受真主的惩罚;除真主外,我绝不能发现任何避难所。
23  我只能传达从真主降示的通知和使命。谁违抗真主和使者,谁必受火狱的刑罚,而且永居其中。
24  待他们看见他们所被警告的刑罚的时候,他们就知道谁是更寡助的。
25  你说:我不知道你们被警告的刑罚是临近的呢?还是我的主将为它规定一个期限呢?
26  他是全知幽玄的,他不让任何人窥见他的幽玄,
27  除非他所喜悦的使者,因为他派遣卫队,在使者的前面和后面行走,
28  以便他知道使者确已传达了他们的主的使命,并且周知他们所有的言行,而且统计万物的数目。

 ¡En el nombre de Alá, el Compasivo, el Misericordioso!

1  Di: «Se me ha revelado que un grupo de genios estaba escuchando y decía: ‘Hemos oído una Recitación maravillosa,
2  que conduce a la vía recta. Hemos creído en ella y no asociaremos nadie a nuestro Señor’.
3  Y: ‘Nuestro Señor -¡exaltada sea Su grandeza!- no ha tomado compañera ni hijo’
4  Y: ‘Nuestro loco decía contra Alá una solemne mentira’.
5  Y: ‘Nosotros creíamos que ni los humanos ni los genios iban a proferir mentira contra Alá’.
6  Y: ‘Había humanos varones que se refugiaban en los genios varones y éstos enloquecieron más a aquéllos’.
7  Y: ‘Creían ellos, como vosotros, que Alá no iba a enviar a nadie’.
8  Y: ‘Hemos palpado el cielo y lo hemos encontrado lleno de guardianes severos y de centellas’.
9  Y: ‘Nos sentábamos allí, en sitios apropiados para oír. Pero todo aquél que escucha, al punto encuentra una centella que le acecha’.
10  Y: ‘No sabemos si se quiere mal a los que están en la tierra o si su Señor quiere dirigirles bien’.
11  Y: ‘Entre nosotros hay unos que son justos y otros que no. Seguimos doctrinas diferentes’.
12  Y: ‘Creíamos que no podríamos escapar a Alá en la tierra, ni aun huyendo’.
13  Y: ‘Cuando oímos la Dirección, creímos en ella. Quien cree en su Señor no teme daño ni injuria’.
14  Y: ‘Entre nosotros los hay que se someten a Alá y los hay que se apartan. Los que se someten a Alá han elegido la rectitud.
15  Los que se apartan, en cambio, son leña para la gehena’.
16  Y: ‘Si se hubieran mantenido en la vía recta, les habríamos dado de beber agua abundante
17  para probarles. A quien se desvíe de la Amonestación de su Señor, Él le conducirá a un duro castigo’.
18  Y: ‘Los lugares de culto son de Alá. ¡No invoquéis a nadie junto con Alá!’
19  Y: ‘Cuando el siervo de Alá se levantó para invocarle, poco les faltó para, en masa, arremeter contra él’».
20  Di: «Invoco sólo a mi Señor y no Le asocio nadie».
21  Di: «No puedo dañaros ni dirigiros».
22  Di: «Nadie me protegerá de Alá y no encontraré asilo fuera de Él.
23  Sólo un comunicado de Alá y Sus mensajes». A quien desobedezca a Alá y a Su Enviado le espera el fuego de la gehena, en el que estará eternamente, para siempre.
24  Hasta que, cuando vean aquello con que se les ha amenazado, sabrán quién es el que recibe auxilio más débil y quién es numéricamente inferior.
25  Di: «No sé si está cerca aquello con que se os ha amenazado o si mi Señor lo retardará aún.
26  El Conocedor de lo oculto. No descubre a nadie lo que tiene oculto,
27  salvo a aquél a quien acepta como enviado. Entonces, hace que le observen por delante y por detrás,
28  para saber si han transmitido los mensajes de su Señor. Abarca todo lo concerniente a ellos y lleva cuenta exacta de todo»