Project Description

AL QAMAR

 شروع الله کا نام لے کر جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے

۱  قیامت قریب آ پہنچی اور چاند شق ہوگیا
۲  اور اگر (کافر) کوئی نشانی دیکھتے ہیں تو منہ پھیر لیتے ہیں اور کہتے ہیں کہ یہ ایک ہمیشہ کا جادو ہے
۳  اور انہوں نے جھٹلایا اور اپنی خواہشوں کی پیروی کی اور ہر کام کا وقت مقرر ہے
۴  اور ان کو ایسے حالات (سابقین) پہنچ چکے ہیں جن میں عبرت ہے
۵  اور کامل دانائی (کی کتاب بھی) لیکن ڈرانا ان کو کچھ فائدہ نہیں دیتا
۶  تو تم بھی ان کی کچھ پروا نہ کرو۔ جس دن بلانے والا ان کو ایک ناخوش چیز کی طرف بلائے گا
۷  تو آنکھیں نیچی کئے ہوئے قبروں سے نکل پڑیں گے گویا بکھری ہوئی ٹڈیاں
۸  اس بلانے والے کی طرف دوڑتے جاتے ہوں گے۔ کافر کہیں گے یہ دن بڑا سخت ہے
۹  ان سے پہلے نوحؑ کی قوم نے بھی تکذیب کی تھی تو انہوں نے ہمارے بندے کو جھٹلایا اور کہا کہ دیوانہ ہے اور انہیں ڈانٹا بھی
۱۰  تو انہوں نے اپنے پروردگار سے دعا کی کہ (بار الٓہا) میں (ان کے مقابلے میں) کمزور ہوں تو (ان سے) بدلہ لے
۱۱  پس ہم نے زور کے مینہ سے آسمان کے دہانے کھول دیئے
۱۲  اور زمین میں چشمے جاری کردیئے تو پانی ایک کام کے لئے جو مقدر ہوچکا تھا جمع ہوگیا
۱۳  اور ہم نے نوحؑ کو ایک کشتی پر جو تختوں اور میخوں سے تیار کی گئی تھی سوار کرلیا
۱۴  وہ ہماری آنکھوں کے سامنے چلتی تھی۔ (یہ سب کچھ) اس شخص کے انتقام کے لئے (کیا گیا) جس کو کافر مانتے نہ تھے
۱۵  اور ہم نے اس کو ایک عبرت بنا چھوڑا تو کوئی ہے کہ سوچے سمجھے؟
۱۶  سو (دیکھ لو کہ) میرا عذاب اور ڈرانا کیسا ہوا؟
۱۷  اور ہم نے قرآن کو سمجھنے کے لئے آسان کردیا ہے تو کوئی ہے کہ سوچے سمجھے؟
۱۸  عاد نے بھی تکذیب کی تھی سو (دیکھ لو کہ) میرا عذاب اور ڈرانا کیسا ہوا
۱۹  ہم نے ان پر سخت منحوس دن میں آندھی چلائی
۲۰  وہ لوگوں کو (اس طرح) اکھیڑے ڈالتی تھی گویا اکھڑی ہوئی کھجوروں کے تنے ہیں
۲۱  سو (دیکھ لو کہ) میرا عذاب اور ڈرانا کیسا ہوا
۲۲  اور ہم نے قرآن کو سمجھنے کے لئے آسان کردیا ہے تو کوئی ہے کہ سوچے سمجھے؟
۲۳  ثمود نے بھی ہدایت کرنے والوں کو جھٹلایا
۲۴  اور کہا کہ بھلا ایک آدمی جو ہم ہی میں سے ہے ہم اس کی پیروی کریں؟ یوں ہو تو ہم گمراہی اور دیوانگی میں پڑ گئے
۲۵  کیا ہم سب میں سے اسی پر وحی نازل ہوئی ہے؟ (نہیں) بلکہ یہ جھوٹا خود پسند ہے
۲۶  ان کو کل ہی معلوم ہوجائے گا کہ کون جھوٹا خود پسند ہے
۲۷  (اے صالح) ہم ان کی آزمائش کے لئے اونٹنی بھیجنے والے ہیں تو تم ان کو دیکھتے رہو اور صبر کرو
۲۸  اور ان کو آگاہ کردو کہ ان میں پانی کی باری مقرر کر دی گئی ہے۔ ہر (باری والے کو اپنی) باری پر آنا چاہیئے
۲۹  تو ان لوگوں نے اپنے رفیق کو بلایا اور اس نے (اونٹنی کو پکڑ کر اس کی) کونچیں کاٹ ڈالیں
۳۰  سو (دیکھ لو کہ) میرا عذاب اور ڈرانا کیسا ہوا
۳۱  ہم نے ان پر (عذاب کے لئے) ایک چیخ بھیجی تو وہ ایسے ہوگئے جیسے باڑ والے کی سوکھی اور ٹوٹی ہوئی باڑ
۳۲  اور ہم نے قرآن کو سمجھنے کے لئے آسان کردیا ہے تو کوئی ہے کہ سوچے سمجھے؟
۳۳  لوط کی قوم نے بھی ڈر سنانے والوں کو جھٹلایا تھا
۳۴  تو ہم نے ان پر کنکر بھری ہوا چلائی مگر لوط کے گھر والے کہ ہم نے ان کو پچھلی رات ہی سے بچا لیا
۳۵  اپنے فضل سے۔ شکر کرنے والوں کو ہم ایسا ہی بدلہ دیا کرتے ہیں
۳۶  اور لوطؑ نے ان کو ہماری پکڑ سے ڈرایا بھی تھا مگر انہوں نے ڈرانے میں شک کیا
۳۷  اور ان سے ان کے مہمانوں کو لے لینا چاہا تو ہم نے ان کی آنکھیں مٹا دیں سو (اب) میرے عذاب اور ڈرانے کے مزے چکھو
۳۸  اور ان پر صبح سویرے ہی اٹل عذاب آ نازل ہوا
۳۹  تو اب میرے عذاب اور ڈرانے کے مزے چکھو
۴۰  اور ہم نے قرآن کو سمجھنے کے لئے آسان کردیا ہے تو کوئی ہے کہ سوچے سمجھے؟
۴۱  اور قوم فرعون کے پاس بھی ڈر سنانے والے آئے
۴۲  انہوں نے ہماری تمام نشانیوں کو جھٹلایا تو ہم نے ان کو اس طرح پکڑ لیا جس طرح ایک قوی اور غالب شخص پکڑ لیتا ہے
۴۳  (اے اہل عرب) کیا تمہارے کافر ان لوگوں سے بہتر ہیں یا تمہارے لئے (پہلی) کتابوں میں کوئی فارغ خطی لکھ دی گئی ہے
۴۴  کیا یہ لوگ کہتے ہیں کہ ہماری جماعت بڑی مضبوط ہے
۴۵  عنقریب یہ جماعت شکست کھائے گی اور یہ لوگ پیٹھ پھیر کر بھاگ جائیں گے
۴۶  ان کے وعدے کا وقت تو قیامت ہے اور قیامت بڑی سخت اور بہت تلخ ہے
۴۷  بےشک گنہگار لوگ گمراہی اور دیوانگی میں (مبتلا) ہیں
۴۸  اس روز منہ کے بل دوزخ میں گھسیٹے جائیں گے اب آگ کا مزہ چکھو
۴۹  ہم نے ہر چیز اندازہٴ مقرر کے ساتھ پیدا کی ہے
۵۰  اور ہمارا حکم تو آنکھ کے جھپکنے کی طرح ایک بات ہوتی ہے
۵۱  اور ہم تمہارے ہم مذہبوں کو ہلاک کرچکے ہیں تو کوئی ہے کہ سوچے سمجھے؟
۵۲  اور جو کچھ انہوں نے کیا، (ان کے) اعمال ناموں میں (مندرج) ہے
۵۳  (یعنی) ہر چھوٹا اور بڑا کام لکھ دیا گیا ہے
۵۴  جو پرہیزگار ہیں وہ باغوں اور نہروں میں ہوں گے
۵۵  (یعنی) پاک مقام میں ہر طرح کی قدرت رکھنے والے بادشاہ کی بارگاہ میں

 بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَٰنِ الرَّحِيمِ

١  اقْتَرَبَتِ السَّاعَةُ وَانْشَقَّ الْقَمَرُ
٢  وَإِنْ يَرَوْا آيَةً يُعْرِضُوا وَيَقُولُوا سِحْرٌ مُسْتَمِرٌّ
٣  وَكَذَّبُوا وَاتَّبَعُوا أَهْوَاءَهُمْ ۚ وَكُلُّ أَمْرٍ مُسْتَقِرٌّ
٤  وَلَقَدْ جَاءَهُمْ مِنَ الْأَنْبَاءِ مَا فِيهِ مُزْدَجَرٌ
٥  حِكْمَةٌ بَالِغَةٌ ۖ فَمَا تُغْنِ النُّذُرُ
٦  فَتَوَلَّ عَنْهُمْ ۘ يَوْمَ يَدْعُ الدَّاعِ إِلَىٰ شَيْءٍ نُكُرٍ
٧  خُشَّعًا أَبْصَارُهُمْ يَخْرُجُونَ مِنَ الْأَجْدَاثِ كَأَنَّهُمْ جَرَادٌ مُنْتَشِرٌ
٨  مُهْطِعِينَ إِلَى الدَّاعِ ۖ يَقُولُ الْكَافِرُونَ هَٰذَا يَوْمٌ عَسِرٌ
٩  كَذَّبَتْ قَبْلَهُمْ قَوْمُ نُوحٍ فَكَذَّبُوا عَبْدَنَا وَقَالُوا مَجْنُونٌ وَازْدُجِرَ
١٠  فَدَعَا رَبَّهُ أَنِّي مَغْلُوبٌ فَانْتَصِرْ
١١  فَفَتَحْنَا أَبْوَابَ السَّمَاءِ بِمَاءٍ مُنْهَمِرٍ
١٢  وَفَجَّرْنَا الْأَرْضَ عُيُونًا فَالْتَقَى الْمَاءُ عَلَىٰ أَمْرٍ قَدْ قُدِرَ
١٣  وَحَمَلْنَاهُ عَلَىٰ ذَاتِ أَلْوَاحٍ وَدُسُرٍ
١٤  تَجْرِي بِأَعْيُنِنَا جَزَاءً لِمَنْ كَانَ كُفِرَ
١٥  وَلَقَدْ تَرَكْنَاهَا آيَةً فَهَلْ مِنْ مُدَّكِرٍ
١٦  فَكَيْفَ كَانَ عَذَابِي وَنُذُرِ
١٧  وَلَقَدْ يَسَّرْنَا الْقُرْآنَ لِلذِّكْرِ فَهَلْ مِنْ مُدَّكِرٍ
١٨  كَذَّبَتْ عَادٌ فَكَيْفَ كَانَ عَذَابِي وَنُذُرِ
١٩  إِنَّا أَرْسَلْنَا عَلَيْهِمْ رِيحًا صَرْصَرًا فِي يَوْمِ نَحْسٍ مُسْتَمِرٍّ
٢٠  تَنْزِعُ النَّاسَ كَأَنَّهُمْ أَعْجَازُ نَخْلٍ مُنْقَعِرٍ
٢١  فَكَيْفَ كَانَ عَذَابِي وَنُذُرِ
٢٢  وَلَقَدْ يَسَّرْنَا الْقُرْآنَ لِلذِّكْرِ فَهَلْ مِنْ مُدَّكِرٍ
٢٣  كَذَّبَتْ ثَمُودُ بِالنُّذُرِ
٢٤  فَقَالُوا أَبَشَرًا مِنَّا وَاحِدًا نَتَّبِعُهُ إِنَّا إِذًا لَفِي ضَلَالٍ وَسُعُرٍ
٢٥  أَأُلْقِيَ الذِّكْرُ عَلَيْهِ مِنْ بَيْنِنَا بَلْ هُوَ كَذَّابٌ أَشِرٌ
٢٦  سَيَعْلَمُونَ غَدًا مَنِ الْكَذَّابُ الْأَشِرُ
٢٧  إِنَّا مُرْسِلُو النَّاقَةِ فِتْنَةً لَهُمْ فَارْتَقِبْهُمْ وَاصْطَبِرْ
٢٨  وَنَبِّئْهُمْ أَنَّ الْمَاءَ قِسْمَةٌ بَيْنَهُمْ ۖ كُلُّ شِرْبٍ مُحْتَضَرٌ
٢٩  فَنَادَوْا صَاحِبَهُمْ فَتَعَاطَىٰ فَعَقَرَ
٣٠  فَكَيْفَ كَانَ عَذَابِي وَنُذُرِ
٣١  إِنَّا أَرْسَلْنَا عَلَيْهِمْ صَيْحَةً وَاحِدَةً فَكَانُوا كَهَشِيمِ الْمُحْتَظِرِ
٣٢  وَلَقَدْ يَسَّرْنَا الْقُرْآنَ لِلذِّكْرِ فَهَلْ مِنْ مُدَّكِرٍ
٣٣  كَذَّبَتْ قَوْمُ لُوطٍ بِالنُّذُرِ
٣٤  إِنَّا أَرْسَلْنَا عَلَيْهِمْ حَاصِبًا إِلَّا آلَ لُوطٍ ۖ نَجَّيْنَاهُمْ بِسَحَرٍ
٣٥  نِعْمَةً مِنْ عِنْدِنَا ۚ كَذَٰلِكَ نَجْزِي مَنْ شَكَرَ
٣٦  وَلَقَدْ أَنْذَرَهُمْ بَطْشَتَنَا فَتَمَارَوْا بِالنُّذُرِ
٣٧  وَلَقَدْ رَاوَدُوهُ عَنْ ضَيْفِهِ فَطَمَسْنَا أَعْيُنَهُمْ فَذُوقُوا عَذَابِي وَنُذُرِ
٣٨  وَلَقَدْ صَبَّحَهُمْ بُكْرَةً عَذَابٌ مُسْتَقِرٌّ
٣٩  فَذُوقُوا عَذَابِي وَنُذُرِ
٤٠  وَلَقَدْ يَسَّرْنَا الْقُرْآنَ لِلذِّكْرِ فَهَلْ مِنْ مُدَّكِرٍ
٤١  وَلَقَدْ جَاءَ آلَ فِرْعَوْنَ النُّذُرُ
٤٢  كَذَّبُوا بِآيَاتِنَا كُلِّهَا فَأَخَذْنَاهُمْ أَخْذَ عَزِيزٍ مُقْتَدِرٍ
٤٣  أَكُفَّارُكُمْ خَيْرٌ مِنْ أُولَٰئِكُمْ أَمْ لَكُمْ بَرَاءَةٌ فِي الزُّبُرِ
٤٤  أَمْ يَقُولُونَ نَحْنُ جَمِيعٌ مُنْتَصِرٌ
٤٥  سَيُهْزَمُ الْجَمْعُ وَيُوَلُّونَ الدُّبُرَ
٤٦  بَلِ السَّاعَةُ مَوْعِدُهُمْ وَالسَّاعَةُ أَدْهَىٰ وَأَمَرُّ
٤٧  إِنَّ الْمُجْرِمِينَ فِي ضَلَالٍ وَسُعُرٍ
٤٨  يَوْمَ يُسْحَبُونَ فِي النَّارِ عَلَىٰ وُجُوهِهِمْ ذُوقُوا مَسَّ سَقَرَ
٤٩  إِنَّا كُلَّ شَيْءٍ خَلَقْنَاهُ بِقَدَرٍ
٥٠  وَمَا أَمْرُنَا إِلَّا وَاحِدَةٌ كَلَمْحٍ بِالْبَصَرِ
٥١  وَلَقَدْ أَهْلَكْنَا أَشْيَاعَكُمْ فَهَلْ مِنْ مُدَّكِرٍ
٥٢  وَكُلُّ شَيْءٍ فَعَلُوهُ فِي الزُّبُرِ
٥٣  وَكُلُّ صَغِيرٍ وَكَبِيرٍ مُسْتَطَرٌ
٥٤  إِنَّ الْمُتَّقِينَ فِي جَنَّاتٍ وَنَهَرٍ
٥٥  فِي مَقْعَدِ صِدْقٍ عِنْدَ مَلِيكٍ مُقْتَدِرٍ

 In the name of Allah, the Entirely Merciful, the Especially Merciful.

1  The Hour has come near, and the moon has split [in two].
2  And if they see a miracle, they turn away and say, “Passing magic.”
3  And they denied and followed their inclinations. But for every matter is a [time of] settlement.
4  And there has already come to them of information that in which there is deterrence –
5  Extensive wisdom – but warning does not avail [them].
6  So leave them, [O Muhammad]. The Day the Caller calls to something forbidding,
7  Their eyes humbled, they will emerge from the graves as if they were locusts spreading,
8  Racing ahead toward the Caller. The disbelievers will say, “This is a difficult Day.”
9  The people of Noah denied before them, and they denied Our servant and said, “A madman,” and he was repelled.
10  So he invoked his Lord, “Indeed, I am overpowered, so help.”
11  Then We opened the gates of the heaven with rain pouring down
12  And caused the earth to burst with springs, and the waters met for a matter already predestined.
13  And We carried him on a [construction of] planks and nails,
14  Sailing under Our observation as reward for he who had been denied.
15  And We left it as a sign, so is there any who will remember?
16  And how [severe] were My punishment and warning.
17  And We have certainly made the Qur’an easy for remembrance, so is there any who will remember?
18  ‘Aad denied; and how [severe] were My punishment and warning.
19  Indeed, We sent upon them a screaming wind on a day of continuous misfortune,
20  Extracting the people as if they were trunks of palm trees uprooted.
21  And how [severe] were My punishment and warning.
22  And We have certainly made the Qur’an easy for remembrance, so is there any who will remember?
23  Thamud denied the warning
24  And said, “Is it one human being among us that we should follow? Indeed, we would then be in error and madness.
25  Has the message been sent down upon him from among us? Rather, he is an insolent liar.”
26  They will know tomorrow who is the insolent liar.
27  Indeed, We are sending the she-camel as trial for them, so watch them and be patient.
28  And inform them that the water is shared between them, each [day of] drink attended [by turn].
29  But they called their companion, and he dared and hamstrung [her].
30  And how [severe] were My punishment and warning.
31  Indeed, We sent upon them one blast from the sky, and they became like the dry twig fragments of an [animal] pen.
32  And We have certainly made the Qur’an easy for remembrance, so is there any who will remember?
33  The people of Lot denied the warning.
34  Indeed, We sent upon them a storm of stones, except the family of Lot – We saved them before dawn
35  As favor from us. Thus do We reward he who is grateful.
36  And he had already warned them of Our assault, but they disputed the warning.
37  And they had demanded from him his guests, but We obliterated their eyes, [saying], “Taste My punishment and warning.”
38  And there came upon them by morning an abiding punishment.
39  So taste My punishment and warning.
40  And We have certainly made the Qur’an easy for remembrance, so is there any who will remember?
41  And there certainly came to the people of Pharaoh warning.
42  They denied Our signs, all of them, so We seized them with a seizure of one Exalted in Might and Perfect in Ability.
43  Are your disbelievers better than those [former ones], or have you immunity in the scripture?
44  Or do they say, “We are an assembly supporting [each other]”?
45  [Their] assembly will be defeated, and they will turn their backs [in retreat].
46  But the Hour is their appointment [for due punishment], and the Hour is more disastrous and more bitter.
47  Indeed, the criminals are in error and madness.
48  The Day they are dragged into the Fire on their faces [it will be said], “Taste the touch of Saqar.”
49  Indeed, all things We created with predestination.
50  And Our command is but one, like a glance of the eye.
51  And We have already destroyed your kinds, so is there any who will remember?
52  And everything they did is in written records.
53  And every small and great [thing] is inscribed.
54  Indeed, the righteous will be among gardens and rivers,
55  In a seat of honor near a Sovereign, Perfect in Ability.

 奉至仁至慈的真主之名

1  复活时临近了,月亮破裂了。
2  如果他们看见一种迹象,他们就退避,而且说:这是一种有力的魔术。
3  他们否认他,而且顺从私欲。每一件事都是确定的。
4  包含警戒的许多消息,确已来临他们了,
5  那是极精密的智慧;但警告是无效的,
6  故你应当避开他们。当召唤者召人于难事的日子,
7  他们不敢仰视地由坟中出来,好象是遍地的蝗虫;
8  大家引颈而奔,群集于召唤者的面前。不信道的人们将说:这是一个烦难的日子!
9  在他们之前,努哈的宗族否认过,他们否认过我的仆人,他们说:这是一个疯人。他曾被喝斥,
10  故他祈祷他的主说:我确是被压迫的,求你相助吧!
11  我就以倾注的雨水开了许多天门,
12  我又使大地上的泉源涌出;雨水和泉水,就依既定的情状而汇合。
13  我使他乘坐一只用木板和钉子制造的船上,
14  在我的眷顾之下飘流,以报答被人否认者。
15  我确已将这件事留作一种迹象,有接受劝告者吗?
16  我的刑罚和警告是怎样的!
17  我确已使《古兰经》易于记诵,有接受劝告的人吗?
18  阿德人否认过先知,我的刑罚和警告是怎样的!
19  我确已使暴风在一个很凶恶的日子去毁灭他们,
20  暴风将众人拔起,他们好象被拔出的海枣树干一样。
21  我的刑罚和警告是怎样的!
22  我确已使《古兰经》易于记诵,有接受劝告的人吗?
23  赛莫德人否认过警告,
24  故他们说:我们同族的一个凡人,我们能顺从他吗?如果那样,我们必定陷于迷误和疯狂之中。
25  难道他在我们之间独自奉到启示吗?不然,他是说谎者,是傲慢者。
26  他们明日将知道谁是说谎者,谁是傲慢者。
27  我必定使母驼考验他们,故你应当期待他们,并应当坚忍,
28  你应当告诉他们,井水是他们和母驼所均分的,应得水分的,轮流着到井边来。
29  他们曾喊来他们的朋友,他就拿起剑来宰了母驼。
30  我的刑罚和警告是怎样的!
31  我确已使一种爆炸去毁灭他们,他们就变成造圈栏者所用的枯木。
32  我确已使《古兰经》易于记诵,有接受劝告的人吗?
33  鲁特的宗族曾否认警告,
34  我确已使飞沙走石的暴风去毁灭他们;惟鲁特的信徒,我在黎明时拯救了他们。
35  那是从我的主那里发出的恩典,我如此报酬感谢者。
36  他确已将我的惩治警告他们,但他们以怀疑的态度否认警告。
37  他们确已诱惑他,叫他不要保护他的客人,但我涂抹了他们的眼睛。你们尝试我的刑罚和警告吧!
38  一种永恒的刑罚在早晨确已袭击了他们。
39  你们尝试我的刑罚和警告吧!
40  我确已《古兰经》易于记诵,有接受劝告的人吗?
41  警告确已降临法老的百姓,
42  他们否认了我的一切迹象,故我以万能者全能者的态度,惩治了他们。
43  你们中不信道的人们比这等人还优秀呢!还是天经中有关于你们的赦条呢?
44  难道他们说:我们是一个常胜的团体。
45  那个团体将败北,他们将转背。
46  不然,复活时是他们的约期;复活时是更艰难的,是更辛苦的。
47  犯罪者的确在迷误和烈火中。
48  他们匍匐着被拖入火狱之日,将对他们说:你们尝试火狱的烧灼吧!
49  我确已依定量而创造万物,
50  我的命令只是快如转瞬的一句话。
51  我确已将你们的宗派毁灭了。有接受劝告的人吗?
52  凡他们所做的事,都记载在天经中。
53  一切小事和大事,都是被记录的。
54  敬畏的人们,必定在乐园里,在光明中,
55  在全能的主那里,得居一个如意的地位。

 ¡En el nombre de Alá, el Compasivo, el Misericordioso!

1  Se acerca la Hora, se hiende la luna.
2  Si ven un signo, se apartan y dicen: «¡Es una magia continua!»
3  Desmienten y siguen sus pasiones. Pero todo está decretado.
4  Ya han recibido noticias disuasivas,
5  consumada sabiduría. Pero las advertencias no sirven.
6  ¡Apártate, pues, de ellos! El día que el Pregonero les convoque para algo horrible,
7  abatida la mirada, saldrán de las sepulturas como si fueran langostas esparcidas,
8  corriendo con el cuello extendido hacia el Pregonero. Dirán los infieles: «¡Éste es un día difícil!»
9  Antes de ello, ya el pueblo de Noé había desmentido. Desmintieron a Nuestro siervo y dijeron: «¡Un poseso!», y fue rechazado.
10  Entonces, invocó a su Señor. «¡Estoy vencido! ¡Defiéndete!»
11  Abrimos las puertas del cielo a una lluvia torrencial
12  y en la tierra hicimos manar fuentes. Y el agua se encontró según una orden decretada.
13  Le embarcamos en aquello de planchas y de fibras,
14  que navegó bajo Nuestra mirada como retribución de aquél que había sido negado.
15  La dejamos como signo. Pero ¿hay alguien que se deje amonestar?
16  Y ¡cuáles no fueron Mi castigo y Mis advertencias!
17  Hemos facilitado el Corán para que pueda servir de amonestación. Pero ¿hay alguien que se deje amonestar?
18  Los aditas desmintieron y ¡cuáles no fueron Mi castigo y Mis advertencias!
19  En un día nefasto e interminable enviamos contra ellos un viento glacial,
20  que arrancaba a los hombres como si hubieran sido troncos de palmeras descuajadas.
21  Y ¡cuáles no fueron Mi castigo y Mis advertencias!
22  Hemos facilitado el Corán para que pueda servir de amonestación. Pero ¿hay alguien que se deje amonestar?
23  Los tamudeos desmintieron las advertencias
24  y dijeron: «¿Vamos a seguir a un solo mortal, salido de nosotros? ¡Estaríamos extraviados y deliraríamos!
25  ¿A él, entre nosotros, se le iba a confiar la Amonestación? ¡No, sino que es un mentiroso, un insolente!»
26  ¡Mañana verán quién es el mentiroso, el insolente!
27  Vamos a enviarles la camella para tentarles. ¡Obsérvales y ten paciencia!
28  Infórmales de que el agua debe repartirse entre ellos y de que beberán por turno.
29  Llamaron a su paisano, que se hizo cargo y desjarretó.
30  Y ¡cuáles no fueron Mi castigo y Mis advertencias!
31  Les lanzamos un solo Grito y fueron como hierba seca que se emplea para levantar una cerca.
32  Hemos facilitado el Corán para que pueda servir de amonestación. Pero ¿hay alguien que se deje amonestar?
33  El pueblo de Lot desmintió las advertencias.
34  Enviamos contra ellos una tempestad de arena. Exceptuamos a la familia de Lot, a la que salvamos al rayar el alba,
35  en virtud de una gracia venida de Nosotros. Así retribuimos al agradecido.
36  Les había prevenido contra Nuestro rigor, pero pusieron en duda las advertencias.
37  Le exigieron a sus huéspedes y les apagamos los ojos. «¡Gustad Mi castigo y Mis advertencias!»
38  A la mañana siguiente, temprano, les sorprendió un castigo duradero.
39  «¡Gustad Mi castigo y Mis advertencias!»
40  Hemos facilitado el Corán para que pueda servir de amonestación. Pero ¿hay alguien que se deje amonestar?
41  Y, ciertamente, la gente de Faraón fue advertida.
42  Desmintieron todos Nuestros signos y les sorprendimos como sorprende Uno poderoso, potísimo.
43  ¿Son vuestros infieles mejores que aquéllos? ¿O hay en las Escrituras algo que os inmunice?
44  ¿O dicen: «Somos un conjunto capaz de defenderse»?
45  Todos serán derrotados y huirán.
46  Pero la Hora es el tiempo que se les ha fijado y la Hora es crudelísima, amarguísima.
47  Los pecadores están extraviados y deliran.
48  El día que sean arrastrados boca abajo al Fuego: «¡Gustad el contacto del saqar !»
49  Todo lo hemos creado con medida.
50  Nuestra orden no consiste sino en una sola palabra, como un abrir y cerrar de ojos.
51  Hemos hecho perecer a vuestros semejantes. Pero ¿hay alguien que se deje amonestar?
52  Todo lo que han hecho consta en las Escrituras.
53  Todo, grande o pequeño, está con signado.
54  Los temerosos de Alá estarán entre jardines y arroyos,
55  en una sede buena, junto a un potísimo Monarca.